Mangroves – Urdu

Tamar kay Ajayebaaat

Tamar kay janglaat ki ehmiyat

Pakistan mein Tamar ki Iqsaam

Zair-e-aab Gehwara

تمر کے جنگلات کیا ہیں؟

مینگرووز یعنی تمر دراصل ایسی جھاڑیاں اور چھوٹے درخت ہوتے ہیں جو دلدلی علاقوں میں سمندر میں آنے والے اتار چڑھاؤ یا جوار بھاٹے کے مقامات پر پیدا ہوتے ہیں، ایسی جگہ جہاں میٹھا اور نمکین پانی ملتا ہے۔ یہ درخت اس ماحول سے مطابقت اختیار کر چکے ہیں۔

تمر کے جنگلات سندھ اور بلوچستان کے مختلف ساحلی علاقوں میں پائے جاتے ہیں، جن کا سب سے بڑا علاقہ دریائے سندھ کا ڈیلٹا ہے۔

تمر کے جنگلات کی اہمیت

تمر کے جنگلات کے لیے بہت زیادہ اہم ہیں۔ یہ ہزاروں اقسام کے جانداروں کو رہنے کے لیے مساکن فراہم کرتے ہیں، ساحلی پٹی کو مضبوط کرتے ہیں، ساحلی کٹاؤ کو روکتے اور بڑھتی ہوئی لہروں اور طوفانوں سے زمینی علاقے کی حفاظت کرتے ہیں۔ تمر کے جنگلات کا ماحولیاتی نظام کئی اہم سماجی و معاشی فوائد بھی دیتا ہے مثلاً لکڑیاں، مچھلیاں اور سیاحت کے مواقع۔

تمر کا حیاتی تنوّع

اس وقت پاکستان میں تمر کی چار اقسام پائی جاتی ہیں۔

سب سے عام سفید تمر (Avicennia marina) ہے، جو تمام تمر کے جنگلات کا 90 فیصد ہے۔

اس کے بعد خمدار جڑ رکھنے والے تمر (Rhizophora mucronate) آتے ہیں، جو تمر کے کُل جنگلات کا 8 فیصد ہیں۔ اس کی مزید شجر کاری کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔

باقی 2 فیصد دو اقسام پر مشتمل ہیں: سیاہ تمر (Aegiceras corniculatum) (1.5 فیصد) اور کانٹے دار یا ہندوستانی تمر (Ceriops tagal) (0.5 فیصد) ہے۔

تمر کے جنگلات کا ماحولیاتی نظام اپنے حیاتی تنوّع (بایو ڈائیورسٹی) میں بہت مالا مال ہے، اور کئی جاندار مختلف وجوہات کی بنا پر تمر کے جنگلات کو اپنا مسکن بناتے ہیں۔

پنکھ ماہی (مڈ اسکپرز) اور کیچڑ میں رہنے والے کیکڑے (مڈ کریبس) ان دلدلی میدانوں میں بِل بناتے ہیں اور اپنی خوراک اور حفاظت کے لیے جوار بھاٹے پر انحصار کرتے ہیں۔ جب سمندر اترتا ہے تو یہ اپنے بلوں میں چھپ جاتے ہیں اور جب چڑھتا ہے تو باہر نکل آتے ہیں۔ جب جوار بھاٹا بہت بڑھ جاتا ہے تو یہ اپنی حفاظت کے لیے تمر کی جڑوں سے اوپر چڑھ آتے ہیں۔

مچھلیاں اور جھینگے اپنی پرورش کے لیے تمر کے جنگلات میں مقامات بناتے ہیں۔ وہ تمر کی الجھی سلجھی جڑوں پر انڈے دیتے ہیں تاکہ وہ شکاریوں سے محفوظ رہیں۔

تمر کے جنگلات ہجرت کرنے والے پرندوں کو بھی تحفظ اور غذا کے وافر ذرائع فراہم کرتے ہیں۔ کیونکہ تمر کے جنگلات سمندری پانی میں پلتے بڑھتے ہیں، اس لیے یہ زمین کے شکاری جانوروں سے محفوظ پناہ گاہ شمار ہوتے ہیں۔ ہجرت کرنے والے کچھ پردے تو تمر کے جنگلات میں اپنے گھونسلے بنا لیتے ہیں جبکہ دیگر اس کے دلدلی میدان میں مچھلیوں، جھینگوں اور کیکڑوں کا شکار کرتے ہیں۔ لال لم ڈھینگ (فلیمنگو) پانی سے خوراک حاصل کرتے ہیں جبکہ سفید بگلے اور ماہی خور پرندے تو پھرتیلے شکاری ہیں۔ شکاری پرندے بھی آسان شکار کی تلاش میں نکلتے ہیں۔

لیکن تمر کے جنگلات سب کے لیے محفوظ نہیں ہوتے کیونکہ ان کے گھنے درختوں میں ایک چالاک شکاری بھی موجود ہوتا ہے، ایک انتہائی نایاب ماہی خور بلّی۔ یہ درمیانے سائز کی بلّی ہوتی ہے جو تمر کے جنگلات کے ماحولیاتی نظام میں ایک زبردست شکاری بن چکی ہے۔

مہمانوں کا تجربہ خود کو تمر کے مساکن میں پائیں۔ تمر کے ماحولیاتی نظام پر نظر ڈالیں اور اپنے ارد گرد سفید تمر اور خمدار جڑوں والے تمر کے درخت دیکھیں۔

جوار بھاٹے کا مشاہدہ کرتے ہوئے تمر کی بقا کے لیے ضروری قدرتی حالات کے بارے میں جانیں۔

نمائش میں موجود مناظر بین (ڈایوراما) دیکھیں اور تمر کے ماحولیاتی نظام کے مختلف پہلوؤں کے بارے میں معلومات حاصل کریں۔

اس نمائش کے ذریعے آپ تمر کے ماحولیاتی نظام، اس میں رہنے والوں اور اس کی اہمیت کے بارے میں جانیں گے۔

مناظر بین (ڈایوراما) کے لیے

سفید تمر کی جڑیں

یہ منظر بین سفید تمر کی ہوا بردار جڑ کو ظاہر کرتا ہے۔ یہ جڑیں اوپر کی سمت بڑھتی ہیں تاکہ ہوا سے براہِ راست آکسیجن حاصل کر سکیں۔

خمدار جڑوں والے تمر کی جڑیں

یہ منظر بین خمدار جڑیں رکھنے والے تمر کے درخت کی جڑیں ظاہر کرتا ہے۔ یہ جڑیں درخت کو پانی میں کھڑا رکھنے کے لیے بیساکھی کا کام کرتی ہیں۔ جڑوں کے اندرونی حصے مچھلیوں اور جھینگوں کے لیے انڈے دینے کا بہترین مقام ہیں۔ کیا آپ کیچڑ کے کیکڑے، گھونگے اور سیپ دار مچھلیاں دیکھ سکتے ہیں؟

تمر میں زندگی

یہ منظر بین تمر کے ماحولیاتی نظام میں رہنے والوں کو ظاہر کرتا ہے۔ یہ ایک پرانے تمر کے درخت کے تنے کا استعمال کرتا ہے جو بہہ کر ساحل پر آ گیا تھا۔ یہاں آپ کو سفید بگلا، کیچڑ کا کیکڑا اور سیپ دار مچھلی نظر آ رہی ہے۔ کونے میں آپ کو خمدار جڑ والے تمر کی جڑیں نظر آ رہی ہیں۔

ساحلی پٹی کے ساتھ تمر کے جنگلات

اس منظر بین میں ساحل کے قریب تمر کے جنگلات نظر آ رہے ہیں۔ تمر کے جنگلات دلدلی علاقے میں ریت سے زیادہ دُور نہیں ہوتے۔ یہ مقامات ہاکس بے یا سینڈز پٹ کے ساحل کے قریب نظر آ سکتے ہیں کہ جہاں ریتیلا ساحل تمر کے تالاب اور سمندر کو الگ کرتا ہے۔ اس میں ایک کیچڑ کا کیکڑا اور ایک سفید بگلا ظاہر ہو رہا ہے۔

پنکھ ماہی سے ملیں

یہ منظر بین پنکھ ماہی (مڈ اسکپر) کو ظاہر کرتا ہے جو تمر کے جنگلات کو اختیار کرنے والا سب سے نمایاں جانور ہے۔ اپنی نوعیت کی مچھلیوں کی یہ انوکھی قسم زمین پر بھی اتنی ہی خوش نظر آتی ہے، جتنی پانی میں ہوتی ہے۔ پنکھ ماہی تمر کے گھنے جنگلات میں دلدلی میدانوں میں رہتی اور ان درختوں کی شاخوں پر چڑھتی ہوئی نظر آتی ہیں۔ یہ انڈے دینے کے لیے کیچڑ میں بِل بناتی ہیں۔

TDF is registered under Societies Registration Act, 1860. It is also certified by Pakistan Centre for Philanthropy (PCP) and maintains the status of Not-for-Profit Organization (NPO) under sub-clause (c) of clause (36) of section 2 of the Income Tax Ordinance, 2001.